ایران میں وائرس کے علاج کیلئے مریضوں نے زہر  کھا لیا ، 700افراد موقعے پر جاں بحق ہو گئے

سوشل میڈیا‎‎

تہران(این این آئی ) زہریلے میتھانول کو کورونا وائرس کا علاج کرنے کی غلط سوچ نے ایران میں 700 سے زیادہ افراد کی کی جان لے لی۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ایرانی وزارت صحت کی جانب سے جاری کردہ اعداد و شمار میں یہ تعداد سب سے زیادہ تھی۔وزارت کے مشیر حسین حسانیان کا کہنا تھا کہ ہلاکتوں کی تعداد میں فرق اس لیے ہے کہ زہر سے متاثرہ چند افراد ہسپتال کے باہر ہی دم توڑ گئے تھے۔

انہوں نے خبر رساں ادارے کو بتایا کہ ہسپتالوں کے باہر تقریبا 200 افراد ہلاک ہوئے ۔اپریل میں جاری ہونے والی والی ایک سرکاری رپورٹ کے مطابق کورونا وائرس کے پھیلا ئوکے دوران گزشتہ سال کے مقابلے میں ایران میں زہر لینے کی وجہ سے ہلاکتوں کی تعداد میں دس گنا اضافہ دیکھا گیا ۔اس رپورٹ کے مطابق زہر کھانے سے 20 فروری سے 7 اپریل کے درمیان 728 ایرانی ہلاک ہوئے جبکہ گزشتہ سال یہ تعداد 66 تھی۔علاوہ ازیں ایرانی وزارت صحت کے ترجمان کیانوش جہاں پور نے کہا کہ 20 فروری کے بعد سے 525 افراد زہریلی میتھانول الکوحل کو نگلنے سے ہلاک ہو چکے ہیں۔انہو نے بتایا کہ کل 5 ہزار 11 افراد میتھانول الکوحل سے زہر ملا تھا۔انہوں نے کہا کہ اس سے تقریبا 90 افراد اپنی آنکھوں کی بینائی کھو چکے ہیں۔حسین حسانیان نے یہ بھی کہا کہ آنکھوں کی بینائی سے محروم لوگوں کی حتمی تعداد میں اس سے کہیں زیادہ اضافہ ہوسکتا ہے۔

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

    اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

    اوپر