سندھ کے سرکاری گوداموں سے لاکھوں ٹن گندم چوری، سندھ کی تاریخ میں چوری کی سب سے بڑی واردات سامنے آگئی اربوں مالیت کی گندم چوری کی تحقیقات شروع

سوشل میڈیا‎‎

کراچی(این این آئی) سندھ کی تاریخ میں سرکاری گندم کی سب سے بڑی چوری کاانکشاف ہوا ہے،سندھ کے سرکاری گوداموں سے ایک لاکھ 68 ہزارمیٹرک ٹن گندم چوری کی گئی، محکمہ اینٹی کرپشن کو تحقیقات کیلئے درخواست دے دی ہے۔ذرائع کے مطابق سندھ میں سرکاری گندم کی اربوں روپے کی چوری کا انکشاف سامنے آیاہے ، محکمہ خوراک سندھ نے سرکاری گوداموں سے ہونیوالے

اس چوری کی تصدیق کردی ہے۔محکمہ خوراک سندھ کے مطابق سندھ کے سرکاری گوداموں سے ایک لاکھ اڑسٹھ ہزارمیٹرک ٹن گندم چوری کی گئی، اس کی مالیت اوپن مارکیٹ میں سات ارب روپے بتائی جارہی ہے۔محکمہ خوراک کے مطابق اس کے علاوہ ایک ارب پانچ کروڑ روپے کی گندم نوری آباد کے بعدکراچی آتے آتے غائب ہوگئی، چیف سیکریٹری نے محکمہ خوراک کی گندم چوری کرنے والے ملازمین، ٹھیکیداروں اور ملوث ملز اونر کیخلاف تحقیقات کی سفارش پرانکوائری اینٹی کرپشن کو سونپ دی ہے۔واضح رہے کہ محکمہ خوراک سندھ نے 14 لاکھ میٹرک ٹن گندم کی خریداری کا ہدف رکھا اور اس حوالے سے سخت احکامات بھی جاری کرتے ہوئے کہا ریجنل ڈپٹی ڈائریکٹرز،ڈسٹرکٹ فوڈ کنٹرولرز گندم کی خریداری کے حوالے سے کوششیں تیز کر دیں ہیں۔وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ نے ہدف مکمل کرنے کے لیے سخت احکامات جاری کرتے ہوئے کہا تھا کہ افسران گندم کے ہدف کے حصول کے لیے تمام وسائل بروئے کار لائیں۔

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

    اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

    اوپر