مہلک وبائی مرض کی صورت میں ماسک پہن کر نماز کے بارے میں کیا حکم ہے؟ علماء کرام اس سے متعلق کیا کہتے ہیں ؟جانئے

خصوصی فیچرز

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)علماکرام کے مطابق ءکوئی عذر نہ ہو تومنہ اورناک کو ڈھانپ کرنماز پڑھنا مکروہِ تحریمی ہے، البتہ اگر کسی عذر کی وجہ سے نماز میں چہرے کو ڈھانپا جائے یا ماسک پہنا جائے تو نماز بلاکراہت درست ہو گی۔آج کل چونکہ وباء سے تحفظ کے لیے ایسا کیاجاتا ہے، اس لیے ماسک پہن کر نماز بلاکراہت درست ہوگی۔(شامی ۔1/ 652))۔ دوسری جانب صف بندی میں فاصلہ رکھنا سے متعلق یہ کہا جارہا ہے کہ یہ طریقہ سنتِ متوارثہ کے خلاف ہے ،احادیثِ مبارکہ میں صف بندی کی بہت تاکید آئی ہے، لیکن اگر کچھ لوگ احتیاطی تدابیر اختیار کرتے

ہوئے اس لیے جماعت میں شامل ہوتے ہیں کہ جماعت کے اجر سے محروم نہ رہیں تو انہیں ان کے حال پر چھوڑ دیا جائے، روک ٹوک نہ کی جائے، اللہ تعالیٰ سب کے احوال اوراَعذارکو خوب جاننے والا ہے، لیکن آئندہ بفضلِ الٰہی حالات نارمل ہونے پر اسے کبھی بھی نہ مثال کے طور پر Quoteکیا جائے اور نہ نمازِ باجماعت میں ایسا طرزِ عمل اختیار کیا جائے، موجودہ صورتِ حال اضطراری ہے۔

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

    اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

    اوپر