عیدالاضحیٰ پر 12 تا 14 ارب کی کھالیں خریدی جائینگی

جنرل خبریں

عید الاضحیٰ کے موقع پر قربانی کے جانوروں سے حاصل ہونے والی کھالیں ملک کی لیدر انڈسٹری کو خام مال کی فراہمی کا اہم ترین ذریعہ ہیں۔

اس سال ملک بھر میں گائے کی 25سے 30لاکھ، بکروں کی 35سے 40لاکھ جبکہ دنبوں کی 10لاکھ کھالیں جمع ہونے کا امکان ہے۔ ٹینرز انڈسٹری کے ذرائع کے مطابق اس سال ملک بھر سے 12سے 14ارب روپے کی کھالیں خریدی جائیں گی جس میں کراچی کا حصہ 5سے 6ارب روپے بنتا ہے۔ کھالوں کی خریداری کے لیے ٹینریز مالکان اورفلاحی انجمنوں کے درمیان عیدِ قرباں سے قبل ہی سودے طے کرلیے جاتے ہیں۔ فلاحی انجمنوں کے علاوہ کھالوں کے تاجر بھی ملک بھر سے کھالیں خرید کر ٹینریز کو فروخت کرتے ہیں۔

ٹینرز انڈسٹری کے ماہرین کا کہنا ہے کہ ملک کی لیدر انڈسٹری کو 30سے 40فیصد خام لیدر قربانی کے جانوروں سے ہی حاصل ہوتا ہے  اور عام دنوں کے مقابلے میں قربانی کے جانوروں سے حاصل ہونے والی کھال سے زیادہ بہتر معیار کا لیدر تیار ہوتا ہے۔ قربانی کے جانور اچھی خوراک اور دیکھ بھال کی وجہ سے صحت مند ہوتے ہیں اسی وجہ سے ان کی کھالیں بھی عام طور پر ذبح ہونے والے جانوروں کے مقابلے میں کوالٹی کے لحاظ سے زیادہ بہتر ہوتی ہیں۔

قربانی کی کھالوں سے بہترین لیدر  بنانے کے لیے کھالوں کی دیکھ بھال انتہائی اہم ہے۔ قربانی کے فوری بعد کھالوں کو صاف کرکے نمک لگاکر اندر کی جانب تہہ کرکے سائے دار جگہ پر رکھا جائے، کھال کو زیادہ پانی اور دھوپ گرمی سے بچایا جائے، قربانی کے جانوروں کی کھال بے دردی سے نہ اتاری جائے ۔ کھال پر کوئی کٹ نہ لگے اور سوراخ نہ ہوں تو لیدر بنانے میں کوئی مشکل نہیں ہوتی جبکہ کٹ زدہ یا سوراخ والی کھالیں پراسیس کے دوران پھٹ جاتی ہیں جس سے انڈسٹری اور ملک کا نقصان ہوتا ہے۔

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

    اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

    اوپر