طاقت کا غرور، نہال ہاشمی کے بیٹوں نے پولیس اہلکاروں کی پھینٹی لگا دی وردیاں بھی پھاڑ دیں ، پولیس نے تھانے پہنچنے پر نہال ہاشمی کو بیٹوں سمیت جیل میں ڈال دیا، چھڑوانے کیلئے لیگی کارکنوں کا عمارت پر دھاوا

سوشل میڈیا‎‎

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)مسلم لیگ ن کے رہنما نہال ہاشمی کے اہلخانہ اور پولیس اہلکاروں کے درمیان کراچی کے علاقے ملیر میں جھگڑا ، جھگڑے کے دوران نہال ہاشمی کے بیٹے اور دیگر اہل خانہ نے پولیس اہلکاروں کی وردیاں پھاڑ دیں۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق نہال ہاشمی کے صاحبزادوں نصیر اور ابراہیم نے ملیر کالا بورڈ پر ٹریفک حادثے کے بعد شہری سے جھگڑا کیا۔ اس دوران گشت پر موجود پولیس موبائل وہاں پہنچی اور دونوں فریقین میں صلح کرانے کی کوشش کی، بات نہ بننے پر نہال ہاشمی کے بیٹوں اور دوسری پارٹی کے لوگوں کو پولیس تھانے لے گئی

اور تھوڑی دیر بعد نہال ہاشمی اور اہلیہ بھی تھانے پہنچ گئے۔اس دوران نہال ہاشمی کے بیٹوں نے تھانے میں ہی پولیس اہلکاروں کی پھینٹی لگا دی۔ اس کے علاوہ ان کی وردیاں بھی پھاڑ دی گئیں۔ اس واقعے کے بعد پولیس نے نہال ہاشمی اور ان کے دونوں بیٹوں کو حوالات میں بند کر دیا۔ پولیس نے لیگی رہنما اور ان کے بیٹوں کیخلاف مقدمہ بھی درج کر لیا ہے۔ مقدمہ ایس ایچ او تھانہ سعود آباد کی مدعیت میں درج کیا گیا، جس میں دھمکیاں، کار سرکار میں مداخلت اور دیگر دفعات شامل کی گئی ہیں۔اسی دوران ن لیگ کے کارکنوں نے بھی پولیس اسٹیشن پر دھاوا بول دیا ۔ لیگی کارکنوں کی جانب سے دھمکی دی جا رہی ہے کہ اگر ایک گھنٹے میں تھانے کا دروازہ نہ کھولا گیا تو دیوار توڑ کر یا پھلانگ کر اندر آجائیں گے اور پھر پولیس کی بدمعاشی ختم کریں گے۔

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

اوپر