نواز شریف مطلوب قرار اسلام آباد ہائیکورٹ کا اشتہار جاری کرنے کا حکم‎

سوشل میڈیا‎‎

اسلام آباد (نیوز ڈیسک )اسلام آباد ہائی کورٹ نے ایون فیلڈ اور العزیزیہ ریفرنس میں نواز شریف کی سزا کے خلاف اپیلوں کی سماعت کرتے ہوئے قومی احتساب بیورو کی استدعا پر سابق وزیراعظم نواز شریف کو مطلوب قرار دیتے ہوئے ان کا اشتہار جاری کرنے کا حکم دے دیا۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے اپنے حکم میں نواز شریف کو وارننگ دیتے ہوئے کہا ہے کہ اگر وہ تیس روز کے اندر عدالت میں پیش نہیں ہوتے تو ان کو اشتہاری قرار دے دیا جائے گا۔ تاہم اگر وہ عدالت میں 30 روز کے اندر پیش نہیں ہوتے تو اشتہاری قرار پائیں گے۔اسلام آباد ہائی کورٹ میں نواز شریف کی سزا کے خلاف اپیلوں پر سماعت کرتے ہوئے سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف کو اشتہاری قرار دینے کے لئے تین گواہوں کی شہادتیں قلمبند کی گئیں، جس پر نیب حکام نے عدالت کو کہا کہ سابق وزیراعظم جان بوجھ کر عدالت سے مفرور ہیں جبکہ ان کے خلاف شہادتیں ریکارڈ ہوچکی ہیں۔نیب کی جانب سے عدالت سے استدعا کی گئی کہ چونکہ نواز شریف عدالت میں پیش ہونا نہیں چاہ رہے تو ان کا اشتہار اخبارات میں دیا جائے، جس پر عدالت نے نواز شریف کی طلبی کا اشتہار حکم دیتے ہوئے کہا کہ ان کا اشتہار اخبارات میں شائع کیا جائے اور ان کی رہائش گاہ پر بھی اشتہار دیا جائے۔اسلام آباد ہائی کورٹ نے اپنے حکم میں کہا کہ انگریزی اور اردو اخبارات میں نواز شریف کے مطلوب ہونے کا اشتہار دیا جائے۔ جن اخبارات کی اشاعت برطانیہ سے ہوتی ہے، ان اخبارات میں بھی اسے شائع کیا جائے، وفاقی حکومت کی جانب سے نواز شریف کی طلبی کے اشتہار کا خرچہ اٹھایا جائے گا، عدالت نے حکم دیا کہ وفاقی حکومت 2 دن کے اندر اشتہار کے اخراجات عدالت میں جمع کروائے۔

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

اوپر