آٹے کا بحران پھر شدت اختیار کر گیا، شہریو ں کیلئے مہنگے داموں آٹا خریدنا بھی انتہائی مشکل

سوشل میڈیا‎‎

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)ملک بھر میں آٹے کا بحران شدت اختیار گیا ہے جس کے باعث شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔لاہور میں آٹے کے بحران کے باعث تندور مالکان نے سادہ روٹی کی قیمت بڑھانے کا فیصلہ کیا ہے جس کے بعد کل سے روٹی کی قیمت 10 روپے کیے جانے کا امکان ہے۔نجی ٹی وی رپورٹ کے مطابق صدر نان بائی ایسوسی ایشن کہتے ہیں کہ 8 روپے کی

روٹی کی قیمت بڑھانا مجبوری ہے، ناقص کوالٹی آٹے کی 15 کلو کی تھیلی بھی 950 روپے سے تجاوز کر گئی ہے جب کہ 860 روپے ملنے والا 20 کلو کا بیگ کہیں دستیاب نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ گزشتہ 10 سال کے دوران روٹی کی قیمت 6 روپے پر ہی ٹکی رہی لیکن صرف رواں سال روٹی سمیت ہر شے کی قیمت میں کئی بار اضافہ ہو چکا ہے۔دوسری جانب کراچی میں آٹے کے بحران پر حکمت علمی کے لیے جسٹس ہیلپ لائن کا اہم مرکزی سیکریٹریٹ میں ہوا۔اجلاس میں جسٹس ہیلپ لائن کے صدر ایڈووکیٹ ندیم شیخ، ماہر قانون شہاب سرکی، سلیم مائیکل سیدذوالفقارشاہ،راجہ عاصم شہزاد،امان خان،حارث امین بھٹی، سردار محمدیونس، محمدنزیراور دیگر نے شرکت کی۔اجلاس میں بتایا گیا کہ دوکان داروں نے 5 کلو آٹا 400 روپے کلو فروخت کرنا شروع کردیا، ریٹیل مارکیٹ میں ایک کلو آٹا 80 سے 90 روپے میں فروخت ہونے لگا، حکومت کی عدم توجہی کے باعث گندم کا بحران شدت اختیار کریگا، آٹا مہنگا ہونے کے باعث ایک نان کی قیمت 15 سے 20 روپے ہونے کا خدشہ ہے، آٹے کی قیمت پر کنٹرول نہ کیا گیا تو غریب عوام پر مہنگائی کا پہاڑ ٹوٹ پڑیگا، بیشتر افراد ویسے ہی بیروزگاری ہے ایسے میں آٹے کی قیمت مہنگا ہونا عوام کو پریشانیوں میں مبتلا کرنے کے برابر ہے، ایڈوکیٹ ندیم شیخ نے اجلاس میں وزیر اعظم اور وزیر اعلیٰ سندھ سے آٹے کی قیمت کم کرنے کی

اپیل کرتے ہوئے کہاکہ وزیر اعلیٰ سندھ گندم کی فراہمی یقینی بنانے کے ساتھ ساتھ فی کلو آٹا 60 روپے تک کرنے پر زور دیں، جسٹس ہیلپ لائن کی کمشنر کراچی سہیل راجپوت سے آٹے کی قیمت کم کرکے عملدرآمد کرنے کی بھی اپیل کی گئی۔اس موقع پر فیصلہ کیاگیا کہاگر فوری طور پر آٹے کی قیمت کم نہ ہوئی تو معاملہ عدالت میں لیجانے پر غور کیا جائیگا۔‎قبل ازیں اسی طرح پشاور میں بھی آٹے کی بڑھتی ہوئی قیمتوں سے

شہری پریشان ہیں اور استطاعت نہ رکھنے والے شہریوں کو سرکاری آٹے کے حصول کے لیے لمبی قطاروں میں کھڑا رہنا پڑتا ہے۔شہری شناختی کارڈ کی فوٹو کاپی جمع کر کے 20 کلو کا تھیلا 860 روپے میں مخصوص ڈیلرز سے خریدتے ہیں۔آٹا بحران کی صورتحال پر دکانداروں کا کہنا ہے کہ آٹا ڈیلرز پنجاب سے آٹا مہنگے داموں ملنے کا رونا روتے دکھائی دیتے ہیں۔

دکانداروں نے بتایا کہ 20 کلو آٹے کا تھیلا 1320جب کہ فائن آٹے کا تھیلا 1400 روپے میں فروخت کرتے ہیں جس سے وہ صرف 10 سے 15 روپے منافع کماتے ہیں۔شہریوں کا کہنا ہے کہ سرکاری آٹے کا معیار بہتر اور کوٹہ دو گنا کیا جائے تاکہ وہ آسانی سے وقت ضائع کیے بغیر آٹا خرید سکیں۔

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

اوپر