کرونا کی وبا کب جان چھوڑے گی؟ امریکی ماہرین نے حقیقت بیان کردی

انٹرنیشنل

واشنگٹن (این این آئی ) واشنگٹن ڈی سی سے متصل انتہائی نگہداشت کے ایک یونٹ سے منسلک اگلے محاذ پر کام کرنے والے طبی عملے نے کہاہے کہ کرونا وائرس کی وبا کا اختتام ابھی دور کی بات ہے۔امریکی میڈیا کے مطابق میری لینڈ کے اسپتال فورٹ واشنگٹن میڈیکل سنٹر کے حکام نے بتایاکہ جو وائرس کے حملے کے ابتدائی دنوں سے ہی ایک مرکز کی شکل اختیار کرگیا تھا۔ فورٹ واشنگٹن اسپتال میں کیون کول سانس کے مرض کے تھراپیسٹ ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ کرونا وائرس کے مریضوں کو جب سانس لینے میں دشواری ہوتی ہے تو انھیں

کس اذیت سے گزرنا ہوتا ہے، اس کا انھیں بخوبی علم ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ان کے لئے یہ سمجھنا نہایت دشوار ہے کہ ایسے میں جب سماجی فاصلے کو برقرار رکھنا مشکل ہوتا ہے، اچانک بھیڑ بھاڑ کی کیفیت سے آخر کس طرح بچا جاسکتا ہے۔طبی ماہرین کے مطابق، تیس سے زیادہ ایسی ریاستوں میں جہاں عوامی مقامات کو دوبارہ کھولنے کے لئے اقدامات کئے گئے، وہاں مریضوں کی تعداد میں اضافہ شروع ہوگیا۔ ان ریاستوں میں ایریزونا، ٹیکساس اور فلوریڈا شامل ہیں۔طبی عملے کے ارکان انتباہ کرتے ہیں کہ اسپتالوں کے مناظر اور مریضوں کی حالت کو دیکھ کر بخوبی اندازہ ہوتا ہے کہ کرونا کتنا ہولناک اور تیزی سے پھیلنے والا وائرس ہے۔ یہ ایک حقیقت ہے اور اسے مذاق نہیں سمجھنا چاہئے۔طبی ماہرین اندیشہ ظاہر کرتے ہیں کہ فی الوقت تو ایسا ہی معلوم ہوتا ہے کہ اس سے چھٹکارہ دور کی بات ہے اور اس سلسلے میں وقت کا تعین ابھی بہت مشکل ہے۔

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

اوپر