’’تحریک لبیک اسلام اور تحریک لبیک پاکستان میں فرق ‘‘ اگر ہمارے گرفتار علماء و کارکنان کو رہا نہ کیاگیا تو کون سا قدم اٹھائینگے؟اشرف آصف جلالی نے حکومت کو وارننگ دیدی

اہم خبریں

لاہور(اے این این)تحریک لبیک یا رسول اللہ ﷺ تحریک لبیک اسلام کے سربراہ ڈاکٹر محمد اشرف آصف جلالی نے اہل سنت و جماعت کی مقتدر شخصیات سے تازہ ترین صورتحال پر ٹیلیفونک رابطہ کے بعد اپنے بیان میں کہا کہ قادیانی اسلام اور پاکستان سے کبھی مخلص نہیں ہو سکتے ان کی اسلام اور پاکستان دشمنی کسی سے ڈھکی چھپی نہیں۔اسلامیانِ پاکستان آئین پاکستان کے منافی کوئی ایجنڈا یا بیانیہ قبول نہیں کریں گے ۔انہوں نے کہا میڈیا تحریک لبیک اسلام (ٹی ایل آئی )اور تحریک لبیک پاکستان(ٹی ایل پی)میں فرق کرے۔ملک بھر سے ہمارے گرفتار شدگان علماء اور کارکنان

کو تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی)کا شمار کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہاپولیس اہل کاروں کو چادر اور چار دیواری کا تقدس پامال کرنے کی اجازت کس نے دی ہے۔ منڈی بہاؤالدین میں میرے استاد گرامی اور ہزاروں علماء کے استاد شیخ الحدیث مفتی محمد نذیر احمد گوندل کے گھر میں داخل ہو کر صاحبزادہ احمد رضا گوندل کو گرفتار کیا گیا۔ ایسے بھکھی شریف منڈی بہاؤالدین سے میرے بڑے بھائی الحاج محمد احسن گوندل کو علالت کے باوجود گرفتار کیا ۔مرکزصراط مستقیم رضائے مجتبیٰ پیپلز کالونی جہاں میں 25 سال سے جمعہ پڑھا رہا ہوں وہاں پولیس نے دہشتگردی کی انتہا کر دی ہے کہ مرکز کے نائب خطیب ،مدرسین اور تمام منتظمین کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔میرے استاد گرامی شیخ الحدیث مفتی محمد ظہور احمد جلالی مہتمم جامعہ محمدیہ اہل سنت مانگا منڈی کو تاحال رہا نہیں کیا گیا ،علامہ مفتی محمد عابد جلالی کے مرکز فکر رضا جیا بگا لاہور کا تمام عملہ گرفتار کر لیا گیا ہے ،مرکزی قائدین ڈاکٹر آصف علی بلالی،علامہ محمد اکرم جلالی،پیر سید محمد ظفر علی شاہ بنوری،صاحبزادہ محمد امین اللہ نبیل سیالوی کو پابند سلاسل کر دیا گیا ہے۔اگر حکومت نے ہمارے گرفتار علماء و کارکنان کو رہا نہ کیا اور اوچھے ہتھکنڈوں سے باز نہ آئی تو فیصلہ کن احتجاجی کال دیں گے۔

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

اوپر