پی ٹی آئی کی وفاقی حکومت نے پورا ایک علاقہ قطری شہزادے کو دیدیا ساتھ ہی صرف ایک لاکھ ڈالر کے عوض کیا کام کرنیکی اجازت دیدی ؟

پاکستان

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی حکومت نے عرب شہزادوں کو قیمتی اورنایاب پرندوں کے شکار کے پرمٹ جاری کر دئیے، ایک پورا علاقہ قطرے شہزادے کو تلور کے شکر کیلئے صرف ایک لاکھ ڈالر کے عوض دس روز کیلئے دیا گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق موسم سرما شروع ہوتے ہی پاکستان میں دنیا کے مختلف علاقوں سے ہجرت کر کے آنیوالے نایاب قیمتی پرندوں کےشکار کا سیزن بھی شروع ہو چکا ہے اور غیر ملکی شکاری اس بار بھی شکار کیلئے پاکستان کا رخ کر رہے ہیں ۔ ہر بار کی طرح اس بار کی عرب شہزادوں نے نایاب اور

قیمتی پرندے تلور کے شکار کیلئے پاکستانی حکومت سے رابطہ کیا ہے اور وفاقی حکومت نے عرب شہزادوں کو بلوچستان میں قیمتی اور نایاب پرندوں کے شکار کیلئے پرمٹ جاری کر دئیے ہیں۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق بلوچستان کے 15 سے زائد علاقوں میں شکار کے لیےاجازت دی گئی ہے جبکہ ایک پورا علاقہ قطر کے شہزادے کو دیا گیاجہاں نایاب پرندے تلور کے شکار کے لیے صرف ایک لاکھ ڈالر کے عوض دس روز کا پرمٹ دیا گیا ہے۔ حکومت کی جانب سے 15سے زائد علاقے غیر ملکیوں کو الاٹ کرنے کی تصدیق کی گئی ہے جبکہ بتایا گیا ہے کہ حکومت نے صرف دس روز کیلئے15 سے زائد علاقے غیر ملکیوں کو الاٹ کئے ہیں۔ قانون و قواعد کے مطابق عرب شہزادے سے ایک لاکھ ڈالر کی باقاعدہ فیس وصول کی گئی ہے ۔ بتایا گیا ہے کہ عرب شہزادوں کو شکار کے پرمٹ وزارت خارجہ کے توسط سے جاری ہوئے ہیں اور اس حوالے سے پہلے وفاقی حکومت نے صوبائی حکومت کو باقاعدہ طور پر آگاہ کیا ہے۔ قطر کے شہزادے کو ایک لاکھ ڈالر جمع کروانے پر سو تلور مارنے کی اجازت دی گئی ہے۔قطری شہزادے کو ضلع جھل مگسی کا علاقے الاٹ کیا گیا ہے جہاں ان کو حکام کے بقول صرف ایک سو تلور مارنے کی اجازت ہو گی، تاہم اجازت نامے میں یہ واضح نہیں کہ اس ایک سو تلور کی مانٹیرنگ یا حساب کو ن کرے گا کیونکہ سکیورٹی کے خدشات کے پیش نظر کسی کو بھی عرب شیوخ کے قریب جانے کی اجازت نہیں دی جاتی۔

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

اوپر