گزشتہ دو سال کے دوران روپے کے مقابلے میں ڈالر کی قیمت میں بڑا اضافہ کیوں ہوا؟اصل وجہ سامنے آگئی،چونکادینے والے انکشافات،24غیر ملکی زرمبادلہ کمپنیوں کونوٹس جاری

پاکستان

کراچی(آن لائن) فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے کم از کم 24 غیر ملکی زرمبادلہ کمپنیوں کو نوٹس جاری کردیئے، ان لوگوں سے تفصیلات طلب کیں جنھوں نے ان سے امریکی ڈالر وصول کیے۔ذرائع نے بتایا کہ پچھلے دو سالوں کے دوران ڈالروں کی اڑان کے سلسلے میں نوٹسز جاری کیے گئے تھے، جس کے نتیجے میں مقامی کرنسی کی قدر میں کمی ہوئی۔

کارپوریٹ ریجنل ٹیکس آفس (سی آر ٹی او) کراچی نے ایک سیکشن (انکم ٹیکس آرڈیننس 2001 کے 176) کے تحت معلومات حاصل کرنے کے لئے نوٹسز جاری کیے۔ایف بی آر خاص طور پر ان لوگوں کے بارے میں معلومات حاصل کررہا ہے جنہوں نے تعلیم، صحت اور سفر کے مقاصد کے لئے ڈالر خرید کر بیرون ملک بھجوائے۔ایف بی آر ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ معلوم ہوا ہے کہ متعدد افراد نے بڑی مقدار میں ڈالر خریدے اور تفاوت پر کمائی کے ل local مقامی کرنسی میں مزید فرسودگی کا انتظار کیا۔کارپوریٹ ریجنل ٹیکس آفس نے ایکسچینج کمپنیوں سے نام، کمپیوٹرائزڈ قومی شناختی کارڈ اور پتے اور تاریخوں سمیت مالی لین دین کی تفصیلات فراہم کرنے کو کہا۔ایف بی آر کے ذرائع نے رپورٹ میں نقل کیا ہے کہ ایکسچینج کمپنیوں کو ایک ہفتے کا وقت دیا گیا تھا تاکہ وہ ایسے خریداروں کی معلومات مقررہ انداز میں فراہم کریں۔ فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے کم از کم 24 غیر ملکی زرمبادلہ کمپنیوں کو نوٹس جاری کردیئے، ان لوگوں سے تفصیلات طلب کیں جنھوں نے ان سے امریکی ڈالر وصول کیے۔ذرائع نے بتایا کہ پچھلے دو سالوں کے دوران ڈالروں کی اڑان کے سلسلے میں نوٹسز جاری کیے گئے تھے، جس کے نتیجے میں مقامی کرنسی کی قدر میں کمی ہوئی۔کارپوریٹ ریجنل ٹیکس آفس (سی آر ٹی او) کراچی نے ایک سیکشن (انکم ٹیکس آرڈیننس 2001 کے 176) کے تحت معلومات حاصل کرنے کے لئے نوٹسز جاری کیے۔

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

اوپر