سروسز ہسپتال میں زیر علاج سابق وزیر اعظم نواز شریف کی حالت بدستور تشویشناک،گردوں کا مرض بھی لاحق ہوگیا،ڈاکٹرز نے بُری خبر سنادی

پاکستان

لاہور(این این آئی) سروسز ہسپتال میں زیر علاج سابق وزیر اعظم نواز شریف کی حالت بدستور تشویشناک ہے اور انہیں گردوں کا مرض بھی لاحق ہوگیا ہے۔نجی ٹی وی کے مطابق نواز شریف کے پلیٹ لیٹس میں اچانک کمی ہوئی اور ان کے پلیٹ لیٹس کی 45ہزار سے کم ہوکر 25 ہزار ہوگئی اور ان کے گردوں کے فنکشن بھی متاثر ہونے لگے ہیں۔ذرائع کے مطابق نواز شریف کو ہارٹ اٹیک کے بعد دی جانے والی دوائی ہپارین کو بند کردیا گیا۔

میڈیکل بورڈ کے مطابق دل کے عارضہ کی وجہ سے پلیٹ لیٹس میں کمی ہوئی دوائی بند ہونے سے پلیٹ لیٹس کی تعداد بڑھ جائے گی۔ پلیٹ لیٹس میں کمی اور گردوں کے متاثر ہونے سے نوازشریف کی صحت نازک ہے اور ان کی صحت کا گراف مستحکم نہیں، معالجین نواز شریف کی صحت کو دیکھتے ہوئے انہیں ڈسچارج کرنے پر آمادہ نہیں، اس حوالے سے معالجین کا موقف ہے کہ نوازشریف کی صحت جب تک مستحکم نہیں ہوتی علاج جاری رہے گا۔اس کے علاوہ نواز شریف کا علاج کرنے والے میڈیکل بورڈ میں ماہر امراض قلب ڈاکٹرزبیر کو بھی شامل کرلیا گیا ہے۔نواز شریف کی 24گھنٹے نگداشت کیلئے ڈاکٹرز کا ڈیوٹی روسٹر جاری کردیاگیا۔دوسری جانب میڈیا سے بات کرتے ہوئے میڈیکل بورڈ کے سربراہ ڈاکٹر محمود ایاز نے کہا کہ نواز شریف ہمارے پاس مریض کی طرح زیر علاج ہیں، ان کی حالت قدرے بہتر ہے۔ یہ نواز شریف کا حق ہے وہ یہاں رہنے چاہتے ہیں یا کسی اورہسپتال جانا چاہتے ہیں، ابھی نواز شریف نے کسی اور جگہ جانے کی خواہش کا اظہار نہیں کیا، جب تک علاج مکمل نہیں ہو جاتا نواز شریف یہی ہیں۔واضح رہے کہ نواز شریف کو 5 روز قبل خون میں پلیٹلیٹس کم ہونے کے باعث سروسز اسپتال منتقل کیا گیا تھا۔ جس کے بعد انہیں دل کا معمولی نوعیت کا دورہ بھی پڑچکاہے۔یادرہے کہ ڈاکٹر شمسی کراچی واپس روانہ ہوگئے ہیں تاہم وہ میڈیکل سے رابطے میں رہیں گے۔

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

    اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

    اوپر