وفاقی اور خود مختار اداروں میں کتنی آسامیاں خالی ہیں، انتہائی حیران کن انکشاف سامنے آ گیا

سوشل میڈیا‎‎

اسلام آباد(آئی این پی )قومی اسمبلی کو حکومت نے آگاہ کیا ہے کہ وفاقی اداروں میں78ہزار623 اورخود مختار اداروں وکارپوریشنز میں 92614آسامیاں خالی ہیں، وفاقی حکومت میں گریڈ18سے22تک 22افسران غیر ملکی شہریت رکھتے ہیں،گزشتہ5سالوں کے دوران پاکستان ریلوے نے191ارب روپے خسارہ کیا، مون سون 2018کے موسم کے دوران ملک بھر میں 47ملین پودے لگائے گئے،وزیراعظم آفس کی گاڑیوں کی فروخت کرنے کیلئے اخبارات کو ایک کروڑ56لاکھ 68ہزار روپے کے

اشتہارات دیے گئے، پیمرا کی جانب سے ملک میں 88پاکستانی نجی ٹی وی چینلز کو لائسنس جبکہ 33غیر ملکی چینلز کو پاکستان میں نشریات کی اجازت دی گئی ،پاکستان ریلوئے کے وفاقی و صوبائی اداروں کے ذمہ2715ملین روپے واجب الادا ہیں۔جمعرات کو قومی اسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران ارکان کے سوالوں کے جواب وفاقی وزیر فواد چوہدری اور وزرائے مملکت زرتاج گل اور علی محمد خان نے دئیے۔ رکن شاہدہ رحمانی کے سوال کے جواب میں وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری نے کہا کہ ریڈیو پاکستان کو سالانہ 5ارب روپے دئیے جاتے ہیں مگر آمدن اس کے مقابلے میں کچھ نہیں،جو ادارے خسارے میں ہیں ان کی عمارتوں کو کام میں لایا جائے گا،حکومت اداروں کا بہتر بنانے کے لیے ملکی تاریخ کی سب سے جامع اصلاحات لا رہی ہے،گزشتہ حکومت نے اداروں کو غیر ملک ادارے سمجھ کر چلایا،ماضی میں جن اداروں کو لوٹا گیا ان کو قابل افراد کے ذریعے اپنے پاں پر کھڑا کریں گے۔طاہرہ اورنگزیب کے سوال کے جواب میں وزیر مملکت موسمیاتی تبدیلی زرتاج گل نے کہا کہ مون سون 2018کے موسم کے دوران ملک بھر میں 47ملین پودے لگائے گئے ۔چوہدری برجیس کے سوال کے جواب میں وزارت ریلوے نے اپنے تحریری جواب میں ایوان کو آگاہ کیا کہ یکم جنوری 2013سے ستمبر2018تک پاکستان ریلوے نے 201.719ارب روپے آمدن

حاصل کی جبکہ اسی عرصے کے دوران پاکستان ریلوے نے 392.698ارب روپے کے اخراجات کئے ۔ ایک اور سوال کے جواب میں وزارت اطلاعات نے اپنے تحریری جواب میں آگاہ کیا کہ پیمرا کی جانب سے ملک میں 88پاکستانی نجی ٹی وی چینلز کو لائسنس جاری کئے گئے جبکہ 33غیر ملکی چینلز کو پاکستان میں بھی نشریات کی اجازت دی گئی ، وزیراعظم آفس کی گاڑیوں کی فروخت کیلئے اخبارات کو ایک کروڑ56لاکھ 68ہزار روپے کے اشتہارات دیے گئے ۔رکن ڈاکٹرنفیسہ شاہ کے

سوال کے جواب میں کابینہ ڈویژن نے اپنے تحریری جواب میں ایوان کو آگاہ کیا کہ وفاقی سول ملازمین کی وفاقی اداروں میں منطورشدہ تعداد 6لاکھ49ہزار176ہے جبکہ 5لاکھ70ہزار553ملازمین کام کر رہے ہیں جبکہ وفاقی اداروں میں 78ہزار623آسامیاں خالی ہیں ۔ اسی طرح وفاقی خود مختاراداروں وکارپوریشنز میں منطور شدہ آسامیوں کی تعداد4لاکھ88ہزار667ہے جن پر 3لاکھ96ہزار53ملازمین کام کر رہے ہیں اور خود مختار اداروں

وکارپوریشنز میں 92614آسامیاں خالی پڑی ہوئی ہیں۔آغاز حقوق بلوچستان پیکج کے تحت مختلف وزارتوں ، ڈویژنوں میں 4095آسامیاں خالی پڑی ہوئی ہیں ۔ رکن مسرت رفیق مہیسر کے سوال کے جواب میں وزارت ریلوے نے اپنے تحریری جواب میں ایوان کوآگاہ کیا کہ پاکستان ریلوے کے وفاقی اداروں کے ذمے 945ملین جبکہ صوبائی اداروں کے ذمے 1770.401ملین کے واجبات ہیں ، صرف محکمہ دفاع نے 831.082وزارت ریلوے کے دینے ہیں ۔

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

اوپر