پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ (ن) سے سمجھوتہ ہو گا یا نہیں ؟ حکومت نے تابوت میں آخری کیل بھی ٹھونک دیا

سوشل میڈیا‎‎

کوئٹہ (این این آئی)وفاقی وزیر برائے پٹرلیم ڈویژن غلام سرور خان نے کہا ہے کہ پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ (ن) سے کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں ہوسکتا، نیب جسے بھی بلائے گا اسے وضاحت کے لئے جاناہوگا ، ملک میں بلاتفریق احتساب ہورہا ہے ،کابینہ کو سپریم کورٹ کی جانب سے کسی کا بھی نام ای سی ایل سے نکالنے کا تحریری حکم نامہ نہیں ملا ، پاکستا ن کے کسی بھی حصے میںکوئی بھی کسی کا داخلہ بند نہیں کرسکتا، پٹرلیم ڈویژن کے ماتحت تمام کمپنیوں کے بورڈ آف ڈائریکٹرز میں صوبوں کو برابری کی بنیاد پر نمائندگی دی جائیگی،

آئندہ ماہ سعودی ولی عہد کا دورہ پاکستان متوقع ہے ،بلوچستان میں ایل پی جی گیس کے 26پلانٹ لگانے کے ٹیڈرز کر نے جارہے ہیں ، یہ بات انہوں نے جمعہ کو وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ میں وزیراعلیٰ بلوچستان میر جام کمال اور صوبائی وزراء و اراکین صوبائی اسمبلی کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی ،وفاقی وزیر غلام سرور خان نے کہا کہ لین دین جمہوریت کاحسن ہے لیکن ان دوجماعتوں جنہوں نے پاکستان کو نقصان پہنچایا ہے ان سے کسی بھی قسم کا لین دین نہیں ہوسکتا ،بلاول بھٹو زرداری سمیت کسی بھی شخص کا نام ای سی ایل سے نکالنے کیلئے کابینہ کو سپریم کورٹ کا تحریری حکم نامہ نہیں ملا ، سندھ کے وزیر کی جانب سے کچھ وزراء کے داخلے کو بند کرنے کی بات سیاسی بیان ہے پاکستان میں کوئی کسی کا داخلہ بند نہیں کرسکتا ،انہوں نے کہا کہ ہم نے خود کو احتساب کے لئے پیش کیا ہے نیب خود مختار ادارہ ہے سپریم کورٹ بھی اپنا کام کر رہی ہے جو کوئی بھی بدعنوانی کے زمرے میں آئیگا وہ بچ نہیں پائے گا الیمہ خان یا کوئی بھی ہو قانون کی گرفت ہر ایک پر ہوگی حکومت نیب سمیت کسی بھی احتساب کے ادارے میں مداخلت نہیں کریگی انہوں نے کہا کہ آج جو لوگ سیخ پا ہو رہے ہیں انکی یاددہانی کے لیے بتانا چاہتاہوں کہ انہی کی حکومت اور اس وقت کی اپوزیشن نے اتفاق رائے سے موجودہ چیئرمین نیب کو تعینات کیا تھا۔ انہوں نے مزید کہا کہ وزیر اعظم عمران خان کے حکم پر تمام صوبوں کے دورے کر رہا ہوں اور جو بھی معاملات زیر التواء ہیں انکی تفصیل حاصل کرکے ان معاملات کو حل کرنے کے اقدامات کئے جائیں گے تحریک انصاف اور بلوچستان عوامی پارٹی صوبے اور مرکز میں اتحادی ہیں بلوچستان کے مسائل پر وزیر اعلی سے تفصیلی بات ہوئی ہے اور یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ مسائل کے حل کے لئے کمیٹیاں تشکیل دی جائیں گی اور آنے والے دنوں میں مثبت تبدیلی رونماء ہوگی انہوں نے کہا کہ ہم پاکستان کی سالمیت اور خوشحالی و استحکام کے لیے اپوزیشن سمیت تمام جماعتوں کو ساتھ لیکر چلنا چاہتے ہیں پٹرولیم ڈویژن کے ماتحت تمام کمپنیوں کے بورڈ آف ڈائریکٹرز میں تمام

صوبوں کو برابر نمائندگی دی جائیگی ایسا کرنے سے صوبوں میں روزگار کے مواقعے اور مسائل کا خاتمہ ممکن ہوگا انہوں نے مزید کہا کہ غریب طبقے کو فلیٹ ریٹ پر گیس فراہم کرنے کا سوچ رہے ہیں پانچ سالوں میں گیس کمپنوں کا خسارہ 154 ارب روپے تک بڑھ گیا اب بھی ہم گیس اور این ایل جی سستے نرخوں پر فراہم کر رہے ہیں انہوں نے بتایا کہ سعودی عرب کے وزیر پٹرولیم آج گوادر کا دورہ کریں گے جبکہ سعودی ولی عہد کی آمد بھی آئندہ ماہ متوقع ہے جس میں اہم معاہدوں پر دستخط ہونگے ایک سوال کے جواب میں غلام سرور خان نے کہا کہ چین کو سعودی عرب کی سی پیک میں شمولیت پر کوئی تحفظات نہیں ہیں ہم نے بلوچستان حکومت کو بھی آن بورڈ لیا ہے انکے تمام

خدشات بھی دور کئے جارہے ہیں انہوں نے کہابلوچستان کے سرد اضلاع میں 28 مکس ایل پی جی پلانٹ نصب کئے جارہے ہیں جن میں سے 26 پر ٹینڈر جلد ہو جائیں گے جبکہ صوبے کے کسی بھی علاقے میں گیس کا مسئلہ ہے تو انکے نمائندے ہمارے پاس آئیں انکے مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کریں گے انہوں نے بتا یا کہ بلوچستان میں گیس کے ذخائر دریافت کرنے کے لیے بھی صوبائی حکومت کو اختیار دیا گیا ہے صوبے میں ایکسپلوریشن کے لیے تین بلاک دینے کی کوشش کریں گے۔ اس موقع پر صوبائی وزراء و مشیران میر ضیاء لانگو ، محمد خان لہڑی ، میر سلیم کھوسہ ، عمر جمالی ، نصیب اللہ مری ، ڈپٹی اسپیکر بلوچستان اسمبلی سردار بابر موسی خیل ، اراکین اسمبلی عبدالرشید بلوچ، مبین خلجی و دیگر بھی موجود تھے۔

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

اوپر