اشرف غنی نے طالبان کو افغانستان میں کس کام کی ناقابل یقین پیشکش کر دی

سوشل میڈیا‎‎

کابل(این این آئی)افغان صدر اشرف غنی نے طالبان کو افغانستان میں اپنا دفتر کھولنے کی پیش کش کرتے ہوئے کہا ہے کہ افغانستان میں پائیدار امن ضرور لائیں گے۔ادھرافغان صدر کی پیشکش پر ردعمل میں طالبان قطر دفتر کے ترجمان سہیل شاہین نے کہاہے کہ طالبان کے سرکاری سیاسی دفترکا مطالبہ واضح ہے، طالبان دوحہ سیاسی دفتر کے لیے عالمی برادری اور اقوام متحدہ کی حمایت چاہتے ہیں،افغان صدر کی اصل بات سے ہٹ کر کی گئی پیشکش امن کے لیے جاری کوششوں کو نقصان پہنچانے کی کوشش ہے۔غیرملکی خبررساں ادارے کے

مطابق ننگرہار میں خطاب کرتے ہوئے افغان صدر کا کہنا تھا کہ افغان حکومت طالبان کو کابل، قندھار یا ننگرہار کہیں بھی ان کا دفتر دے سکتے ہیں، افغانستان میں پائیدار امن واپس لائیں گے۔افغان صدر کی پیشکش پر ردعمل میں طالبان قطر دفتر کے ترجمان سہیل شاہین نے کہاکہ طالبان کے سرکاری سیاسی دفترکا مطالبہ واضح ہے، طالبان دوحہ سیاسی دفتر کے لیے عالمی برادری اور اقوام متحدہ کی حمایت چاہتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ افغان صدر کی اصل بات سے ہٹ کر کی گئی پیشکش امن کے لیے جاری کوششوں کو نقصان پہنچانے کی کوشش ہے۔

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

اوپر