غلطی پر بیوی کو مارنے کی مثال علامتاًدی تھی،سربراہ جامعہ الازھر کی وضاحت

سوشل میڈیا‎‎

قاہرہ(این این آئی) مصرکی سب سے بڑی دینی درسگاہ جامعہ الازھر کے سربراہ الشیخ ڈاکٹر احمد الطیب نے غلطی کرنے پر بیوی کو مارنے کے بیان کی وضاحت کرتے ہوئے کہاہے کہ انہوں نے بیوی کو مارنے کی مثال صرف علامتاًدی تھی یہ نہیں کہ ان کے بیان کے بعد خواتین کی مارپیٹ کی اجازت مل گئی ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق شوہر کے ہاتھوں بیوی کی مارپیٹ سے متعلق حال ہی میں ایک متنازع بیان مصرکی سب سے بڑی دینی درسگاہ جامعہ الازھر کے سربراہ الشیخ ڈاکٹر احمد الطیب کی طرف سے سامنے آیا۔ انہوں نے کہا تھا کہ بیوی غلطی کرے

تو اسے مارپیٹ کی جا سکتی ہے مگر سوشل میڈیا پر ان کے بیان پر سخت تنقید کے بعد انہیں اپنے بیان کی وضاحت کرنا پڑی ۔ شیخ الازھر کا کہنا تھا کہ بیویوں کو مارنے کی مثال صرف علامتی ہے۔ اس کا یہ مطلب نہیں ان کے بیان کے بعد خواتین کی مارپیٹ کی اجازت مل گئی ہے۔

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

    اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

    اوپر