مسلم لیگ (ن) نے استعفوں کا اعلان کردیا،کل اسمبلی کے سپیکر کو پیش کئے جائینگے ‎

سوشل میڈیا‎‎

لاہور(این این آئی)پاکستان مسلم لیگ (ن) نے پنجاب اسمبلی کی قائمہ کمیٹیوں سے مستعفی ہونے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ کل (ہفتہ) کے روز سپیکر پنجاب اسمبلی کو استعفے جمع کر ادیں گے،قائد حزب اختلاف حمزہ شہباز کو پروڈکشن آرڈر پر اسمبلی نہ لایا گیا آئندہ ہفتے پنجاب اسمبلی کی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس کوٹ لکھپت جیل کے باہر ہوگا۔(ن) لیگ کی صوبائی پارلیمانی پارٹی کااجلاس سابق سپیکر رانا محمد اقبال کی صدارت میں ماڈل ٹاؤن سیکرٹریٹ میں ہوا۔

اجلاس میں رانا مشہود احمد خان، عظمیٰ بخاری، عطاء اللہ تارڑ سمیت اراکین اسمبلی نے شرکت کی۔اجلاس میں آج جمعہ سے شروع ہونے والے پنجاب اسمبلی کے اجلاس کے لئے حکمت عملی، آزادی مارچ سمیت دیگرمعاملات پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔اجلاس کے بعد پنجاب کی سیکرٹری اطلاعات عظمی بخاری نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ملک کو آرڈیننس کے ذریعے ملک چلایا جارہا ہے،صرف ایک شخص عمران خان کے اثر و رسوِِخ سے پنجاب اسمبلی چل رہی ہے، اس کی اجازت کے بغیرایک پتہ نہیں ہل سکتا، اپوزیشن کو دیوار کے ساتھ لگایا جارہا ہے۔انہوں نے کہا کہ13مہینوں میں ہر ممکن کوشش کی کہ حکومت کے ساتھ چلیں۔ہم نے قائمہ کمیٹیوں کے قیام میں تعاون کیا،آج تک پارلیمانی کمیٹیز نہیں بن سکیں او ریہ معاملہ وزیر قانون کی فرعونیت اور سپیکر کی ڈھنگ ٹپاؤ پالیسی کا شکار ہو رہا ہے۔جب ان کے ممبران جیلوں میں تھے تو پروڈکشن آڈر کے معاملے پر ڈیسک بجائے گئے اور انجمن ستائش باہمی کا ماحول بنایا گیا۔قائد حزب اختلاف حمز شہباز پر ایک الزام ثابت نہیں ہو سکا اور انہیں حلقے کی نمائندگی سے محروم رکھا جارہا ہے۔ جب پی ٹی آئی اپوزیشن میں تھی تو اس کا کردار ناراض بہو والا ہوتا تھا۔ انہوں نے کہا کہ آج تک اس حکومت نے یہ واضح نہیں کیا کہ محکمانہ پالیسیاں کیا ہیں،وزیرقانون بلدیاتی انتخاب کا بل بلڈوز کرتے ہیں۔اجلاس میں تمام قائمہ کمیٹیوں سے استعفے دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے او ر ہفتہ کے روز سپیکر سے ملاقات کر کے استعفے پیش کر دیں گے۔انہوں نے کہا کہ حمزہ شہباز کو پراڈکشن آرڈر پر نہ لایا گیا تو آئندہ ہفتے پنجاب اسمبلی کی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس کوٹ لکھپت جیل کے باہر ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ 30 سالوں سے یہ سن رہے ہیں کہ نواز شریف اور شہباز شریف میں اختلافات ہوگئے ہیں لیکن افواہیں پھیلانے والوں کو ہر بار ناکامی کا منہ دیکھنا پڑا۔شہباز شریف کی میٹنگ کے دوران ہی طبیعت ٹھیک نہیں تھی، ہم مولانا کی حمایت کا اعلان کرچکے ہیں اس لئے منفی خبریوں کی کوئی اہمیت نہیں۔

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

اوپر