خوفزدہ بھارت کا گھنائونا چہرہ سامنے آنے لگا، بھارتی فوج نے شہید کمانڈر ریاض نائیکو کی میت قبر سے نکال کر کیا کرنے کا فیصلہ کر لیا؟

سوشل میڈیا‎‎

اسلام آباد (این این آئی)جموں وکشمیر ماس موومنٹ کے وائس چیئرمین عبدالمجید میر نے کہا ہے کہ بھارتی فوجی کشمیری شہید نوجوانوں کے جنازوںکے بڑے بڑے اجتماعات سے خوفزدہ ہو کر اب انکی میتیںلواحقین کے حوالے کرنے کے بجائے سونہ مرگ اور اوڑی میں اپنے زیر انتظام قبرستانوں میں دفن کررہی ہے۔ کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق عبدالمجید میر نے اسلام آباد میںجاری ایک بیان میں کہا کہ شہید نوجوانوں کی میتیں ضلع گاندر بل کے علاقے سونہ مرگ اور ضلع بارھمولہ کے علاقے اوڑی میں بھارتی فوج کے زیر انتظام قبرستانوں میں خاموشی سے دفن کردی جاتی ہیںجسکا واحد مقصد شہداء

کے جنازوں میں کشمیریوں کی والہانہ شرکت کو روکنا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی فوج یہ مذموم عمل کورونا وائرس کی آڑ میں انجام دے رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ شہیدکمانڈر ریاض نائیکو کی میت بھی سونہ مرگ کے علاقے میں دفن کی گئی تھی جہاں ان کی قبر پر فاتحہ خوانی کیلئے لوگوں کا تانتا بندھا رہتا ہے لہذا اطلاعات یہ ہیں کہ بزدل بھارتی فوج نے ان کی میت کو قبر سے نکال کر کسی نامعلوم مقام پر دفنانے کا فیصلہ کیا ہے۔عبدالمجید میر نے شہید کمانڈر کی میت کو قبر سے نکال کو کسی نامعلوم جگہ پر دفنانے کے بھارتی فوج کے منصوبے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہاہے کہ قابض فوج اپنی گھنائونی حرکتوں کے ذریعے کشمیری عوام کے دلوں سے اپنے شہداء کی محبت ہرگز نہیں نکال سکتی ۔ انہوںنے کہا کہ کشمیر ی اپنے شہداء کے عظیم مشن کو مقصد کے حصول تک ہر قیمت پر جاری رکھیں گے۔

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

    اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

    اوپر