پی ایچ اے کی انتظامیہ نے پی ٹی آئی کی   کرپشن فری اور گڈ گورننس کی پالیسی ہوا میں اڑا دی

سوشل میڈیا‎‎

لاہور(آن لائن)وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کو پی ایچ اے کی مالی بے ضابطگیوں کی رپورٹ پیش کر دی گئی ،بے قاعدگیوں میں مبینہ طور پر ملوث ڈائریکٹر ہارٹیکلچر زون ون اختر محمود کے خلاف تحقیقات  کی سفارش کر دی گئی ۔تفصیلات کے مطابق   پی ایچ اے کی انتظامیہ نے پی ٹی آئی کی کرپشن فری اور گڈ گورننس کی پالیسی ہوا میں اڑا دی۔وزیراعلیٰ پنجاب کو مالی  بے ضابطگیوں سے متعلق پیش کی گئی رپورٹ میں کہاگیا ہے کہ  بیقاعدگیوں میں مبینہ طور پر ملوث ڈائریکٹر ہارٹیکلچر زون ون اختر محمود کے خلاف تحقیقات کی جائیں، اختر محمود زون ٹو میں تعیناتی کے دوران رنگ روڈ میں ایک لاکھ پودے لگوانے میں ناکام رہے،

رنگ روڈ لاہور اور شہر میں بھی کارکردگی ناقص رہی، ناقص کارکردگی کے باوجود اختر محمود کو زون ٹو کے بجائے زون ون کا چارج دے دیا گیا، زون ون میں اعلیٰ تعلیم یافتہ اور بااثر طبقہ رہائش پذیر ہے، اختر محمود پر زون ٹو میں تعیناتی کے دوران کیمروں کے غلط استعمال کا بھی الزام ہے، رپورٹ میں مزید کہاگیا ہے کہ   اختر محمود 1998 میں ایل ڈی اے سے پی ایچ اے میں بوگس انٹری کے ذریعے آئے،،اختر محمود 1998 میں متعدد ملازمین فراڈ انٹری کے ذریعے پی ایچ اے میں لائے،1999 اور 2000 میں سیلز ٹیکس اور اشتہاری بورڈز ٹیکس کے خلاف تاجروں اور میڈیا کے ذریعے ادارے پر غیرقانونی دباؤ ڈلوایا،  پی ایچ اے پر مشیر وزیراعلیٰ آصف محمود، وزیراعلیٰ کو گمراہ کن مشورے دے رہے ہیں،  جس سے وزیراعلیٰ اور حکومت کی ساکھ متاثر ہو رہی ہے،ذرائع نے بتایا کہ وزیر اعلیٰ کو رپورٹ کے بعد مشیر آصف محمود پی ایچ اے کے چہیتے افسر کو بچانے میں مصروف ہیں اس حوالے سے دیگر اعلی حکام سے رابطے کررہے ہیں۔

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

    اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

    اوپر