بزدار حکومت کا بارش کے پانی کو زیرزمین واٹر ٹینکوں میں محفوظ کر کے دوبارہ قابل استعمال بنانے کا منصوبہ حقیقت بن گیا، منصوبہ کس طرح لاہور والوں کیلئے فائدہ مند ثابت ہو گا؟جانئے

سوشل میڈیا‎‎

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کی خصوصی ہدایت پر حکومت پنجاب نے بارش کے پانی کو ذخیرہ کرکے مختلف مقاصد کیلئے استعمال کرنے پر کام شروع کردیا ہے۔تفصیلات کے مطابق پنجاب کے مختلف شہروں میں پانی کی قلت اور پینے کے صاف پانی کی عدم دستیابی بزدار حکومت کیلئے مسئلہ بنی ہوئی تھی جس کے حل کیلئے حکومتِ پنجاب حرکت میں آگئی ہے

۔وزیرِ اعلیٰ پنجاب کی ہدایت پر لاہور میں ایک بڑا واٹر اسٹوریج ٹینک تیار کر لیا گیا ہے جسے لاؤرنس روڈ پر تعمیر کیا گیا۔ اسٹوریج ٹینک کی گنجائش 14 لاکھ گیلن رکھی گئی ہے۔نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق  حکومتِ پنجاب نے صوبے بھر میں بارش کے پانی کو ذخیرہ کرکے عوام کے کام میں لانے کیلئے دیگر منصوبوں پر بھی کام شروع کردیا ہے جن پر جلد پیشرفت متوقع ہے۔اس حوالے سے گزشتہ روز حکومتِ پنجاب نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا کہ ہم نے لاہور میں انڈر گراؤنڈ واٹر ٹینک کا ٹیسٹ ٹرائل مکمل کر لیا جس کی گنجائش 14 لاکھ گیلن ہے۔حکومتِ پنجاب نے اِس حوالے سے ایک ویڈیو بھی شیئر کی جس میں دِکھایا گیا ہے کہ بارش کا پانی انڈر گراؤنڈ واٹر ٹینک میں ذخیرہ کیا جارہا ہے جس کے اردگرد حکومت کے مختلف اہلکار اور افسران موجود ہیں۔ وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے لاہور کے شہریوں کی سہولت اور بارش کے پانی کو ذخیرہ کرنے کے لیے ایک منصوبہ لگایا ہے جس کے تحت بارش کے پانی کو انڈر گراؤنڈ ریزوائر کے ذریعے ایک پانی کے ٹینک تک لیجایا جائے گا۔بارش کے پانی کو انڈر گراؤنڈ طریقے سے اب ذخیرہ کر کے دوسرے مقامات تک لے جایا جائے گا جہاں صاف پانی کو استعمال کیا جائے گا۔ اس منصوبے کو لاہور کے عوام کے لیے گیم چینجر سمجھا جا رہا ہے۔اس منصوبے کے تحت لارنس روڈ کے قریب 149 ملین روپے کی لاگت سے منصوبہ تیار کیا گیا ہے جس کے ذریعے کوئنز روڈ پر جمع ہونے والے بارش کے پانی کو اب ذخیرہ کر کے دوبارہ استعمال میں لایا جا سکے گا۔

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

اس وقت زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

اوپر